پنجا ب میں چالیس سال حکمرانی کرنے والےسکھ لیڈر مہاراجہ رنجیت سنگھ کی 183 ویں برسی کی تقریبات میں شرکت کے لئے بھارت سے 500 کے قر یب سکھ یاتری واہگہ بارڈر کے راستے پاکستان پہنچ گئے

پنجا ب میں چالیس سال حکمرانی کرنے والےسکھ لیڈر مہاراجہ رنجیت سنگھ کی 183 ویں برسی کی تقریبات میں شرکت کے لئے بھارت سے 500 کے قر یب سکھ یاتری واہگہ بارڈر کے راستے پاکستان پہنچ گئے جہاں پر متروکہ وقف املاک بورڈ کے ڈپٹی سیکر ٹری عمران گوندل نے مہمانوں کا استقبال کیا جبکہ پردھان سردار امیر سنگھ , , بورڈ ترجمان عامر ہاشمی , سکیورٹی انچارج امجد الطاف و دیگر افسران اور سکھ رہنما انکے ہمراہ تھے . رانا شاہد نے میڈیا کے نما ئندوں کو بتایا کہ چیرمین بورڈ حبیب الرحمن گیلانی کے خصو صی احکامات کی روشنی میں بھارت سے آنے والے مہمانوں کے لئے گئے ہیں . پردھان سردار امیر سنگھ کا کہنا تھا کہ ٹرسٹ بورڈ نے PSGPC کے ساتھ مکمل مشاورت کے ساتھ انتظامات مکمل کیے ہیں جس پر ہم مطمعن ہیں . ڈپٹی سیکر ٹری عمران گوندل نے بتایاکے مہاراجہ رنجیت سنگھ کی برسی کی تقریب 29 جون گورودوارہ ڈیرہ صاحب میں منعقد ہو گی بورڈ ترجمان کے مطابق سکھ یاتری لاہور سے سپیشل ٹرینوں کے ذریعے ننکانہ صاحب پہنچ گئے ہیں جہاں پر 24 جون کو یاتری گورودوارہ پنجہ صاحب حسن ابدال کا دورہ کرنے کے بعد 26 جون کو لاہور واپس آئیں گے . لاہور سے 27 اور 28 جون کو گورودوارہ کر تارپور صاحب نارووال اور گورودوارہ روہڑی صاحب ایمن آباد کا دورہ کر کے واپس لاہور آئیں گے , استقبا ل کے موقع پر یاتریوں کے پارٹی لیدر سردار گرمیت سنگھ بو نے میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یہاں پہنچ کر بہت خوشی محسوس ہوتی ہے , مذہبی تقریبات کی ادائیگی کے ساتھ ساتھ پاکستانی عوام کی محبت ہمیں یہا ں کھینچ لاتی ہے , یہا ں آنے والے تمام یاتریوں کو بہت پیار اور عزت ملتی ہے , سکھ یاتری مختصر دورے کے لئے پاکستان آتے ہیں اور حسین یادیں لیے واپس لوٹتے ہیں .