متروکہ وقف املاک بورڈ ممبران کا سال کا پہلا اور مجموعی طور پر 333 واں اجلاس چیئرمین ڈاکٹر عامر احمد کی زیر صدارت بورڈ آفس میں منعقد ہوا۔

متروکہ وقف املاک بورڈ ممبران کا سال کا پہلا اور مجموعی طور پر 333 واں اجلاس چیئرمین ڈاکٹر عامر احمد کی زیر صدارت بورڈ آفس میں منعقد ہوا۔
جس میں سرکاری اور غیر سرکاری اور ہندو، سکھ بورڈ ممبران کے علاوہ ادارے کی ڈپٹی سیکرٹری ایڈمن روشنا فواد ، ڈپٹی سیکرٹری پراپرٹی منیر احمد ، کنٹرولر اکاؤنٹس عدیل احمد سمیت دیگر افسران بھی شریک ہوئے۔اجلاس میں ممبران کے روبرو 15 نکاتی ایجنڈا رکھا گیا جس میں بیشتر کی منظوری دی گی جبکہ بعض ایجنڈا آئیٹم کو موخر کر دیا گیا اجلاس میں بابا گورو نانک دیو جی کے اسکالر شپ کا دائرہ کار بڑھاتے ہوئے ہندو اور سکھ مذہب کے بچوں کو سرکاری خرچہ پر فنی تعلیم دلانے کی منظوری دی گئی۔اجلاس میں بتایا گیا کہ گزشتہ کئی سالوں سے FA کے بعد تعلیم جاری رکھنے والے ہندو اور سکھ بچوں کو بابا گورو نانک سکالرشپ کے تحت 10 فیصد فی کس کی شرح سے جو تعلیمی اخراجات کیے جا رہے ہیں اس میں مزید اضافہ کیا جائے گا۔ بابا گورو نانک دیو جی کے اسکالرشپ کا دائرہ بڑھاتے ہوئے سرکاری خرچہ پر فنی تعلیم دلوائی جائے گی جو بچے فنی تعلیم اداروں میں داخلہ لیے انکی اور دیگر اخراجات متروکہ وقف املاک احکام متعلقہ تعلیمی اداروں کی برائے راست ادا کرے گا ۔